Home پاکستان آخر جیکب آباد زندگی گزارنے کے لیے مشکل ترین شہر کیوں بن...

آخر جیکب آباد زندگی گزارنے کے لیے مشکل ترین شہر کیوں بن گیا؟

رمیوں میں پانی کی طلب کو پورا کرنے کے لیے گدھا گاڑیوں پر پانی سپلائی کیا جاتا ہے

سندھ کا شہر جیکب آباد زمین پر گرم ترین مقامات میں سے ایک ہے۔ یہاں پڑنے والی ریکارڈ توڑ گرمی کی وجہ سے بین الاقوامی میڈیا نے بھی اس شہر کے حوالے سے دلچسپی دکھائی ہے۔

حال ہی میں دی ٹیلی گراف نے ایک خبر شائع کی جس میں کہا گیا ہے کہ جیکب آباد ان 2 مقامات میں سے ایک ہے جہاں کا درجہ حرارت انسانی جسم کے لیے قابلِ برداشت درجہ حرارت کی حد سے زیادہ ہوچکا ہے۔ جیکب آباد کے علاوہ ایسا دوسرا مقام متحدہ عرب امارات کا علاقہ راس الخیمہ تھا۔ اس خبر میں لوگ بروگھ (Loughborough) یونیورسٹی میں ہونے والی ایک تحقیق کو حوالہ بناکر مزید تفصیلات کا بھی ذکر کیا گیا۔

2019ء میں ٹائم میگزین نے بھی اپنے ایک مضمون میں دعویٰ کیا تھا کہ کچھ عرصے بعد جیکب آباد انسانی آبادی کے لیے غیر موزوں ہوجائے گا۔ مضمون میں کہا گیا تھا کہ ’سندھ میں موسمِ گرما سنگین صورت اختیار کرگیا ہے‘، اور یہ کہ ’اس سے اموات ہوسکتی ہیں‘۔

لیکن پاکستان میں اسے صرف وقتی طور پر اہمیت دی گئی۔ یہاں ہر سال گرمیوں کا نیا ریکارڈ قائم ہوتا ہے لیکن پھر بھی موسمی تغیرات کے اثرات سے بچنے کے لیے خاطر خواہ اقدامات نہیں اٹھائے جاتے۔

پاکستان میٹرولوجیکل ڈپارٹمنٹ (پی ایم ڈی) کے مطابق 28 مئی 2021ء کو پارا 50 ڈگری سیلسیس تک چلا گیا جو اب تک اس سال کا سب سے زیادہ درجہ حرارت ہے۔ گزشتہ سال جون میں پارا 51 ڈگری تک گیا تھا۔ پی ایم ڈی کے ایک ڈائریکٹر ندیم فیصل کے مطابق 2019ء میں بھی پارا 51 ڈگری تک گیا تھا۔

ان کی جانب سے فراہم کیے گئے اعداد و شمار کے مطابق ہیٹ ویوز عموماً مارچ سے شروع ہوتی ہیں اور ستمبر تک جاری رہتی ہیں۔ یوں ایک اور سخت موسمِ گرما تقریباً اپنے اختتام پر ہے اور جیکب آباد کے باسیوں کو کچھ عارضی سکون ضرور ملے گا۔ لیکن اس بات کی ضرورت برقرار ہے کہ حکومت ان مسائل کے حل کے لیے طویل مدتی اقدامات کرے تاکہ آئندہ سال ان مسائل سے بچا جاسکے۔

گرمی کا توڑ

شدید گرمیوں میں جب جیکب آباد تپ رہا ہوتا ہے تو اکثر رہائشیوں کے لیے وہ معمولی بات ہوتی ہے۔ اس دوران وہ تھادل، لیموں پانی، گنے کا رس اور لسی سمیت دیگر روایتی مشروب پیتے ہیں اور اس جیسے دیگر ٹوٹکے اپناتے ہیں۔ جن لوگوں کے رشتے دار دیگر شہروں میں ہوتے ہیں اور ان کے پاس وہاں جانے کے وسائل بھی ہوتے ہیں تو وہ شدید گرمیوں میں جیکب آباد چھوڑ دیتے ہیں۔

عمران اوڈھو جیکب آباد کی ضلعی کونسل کے سابق چیئرمین ہیں، انہوں نے ای او ایس کو بتایا کہ ’کئی لوگ گرمیوں کے موسم میں شدید گرمی سے بچنے کے لیے کراچی، کوئٹہ اور جامشورو چلے جاتے ہیں‘۔

دیگر افراد دن کے وقت باہر نکلنے سے گریز کرتے ہیں۔ ڈاکٹر قمر الزماں چوہدری ایک کلائیمیٹ چینج ایکسپرٹ ہیں، وہ 2012ء میں جاری ہونے والی پاکستان کلائیمیٹ چینج پالیسی کے مرکزی مصنف بھی تھے۔

ان کے مطابق ’جیکب آباد کا جغرافیائی محل وقوع اور یہاں کا خشک موسم زیادہ درجہ حرارت کی وجہ بنتا ہے۔ لیکن دلچسپ بات یہ ہے کہ یہاں موسمی تغیر کی وجہ سے لوگوں کی زندگیوں میں بھی تغیر دیکھا جارہا ہے، لوگ صبح جلدی اپنے کاموں کا آغاز کرتے ہیں، دن وقت باہر نکلنے سے گریز کرتے ہیں اور پھر شام کو باہر جاتے ہیں‘۔

یکن ہر کوئی گھر میں نہیں رہ سکتا۔ جیکب آباد میں چاول کی کاشت کی جاتی ہے جو گرمیوں کے موسم میں ہی ہوتی ہے۔ چاول کے پودے مئی کی ابتدا میں نرسریوں میں اگائے جاتے ہیں اور جون جولائی میں انہیں کھیتوں میں لگایا جاتا ہے۔ اس وجہ سے سال کے گرم ترین دنوں میں کسان اپنا کام کرتے ہیں۔

صاحب خاتون ایک معمر کسان ہیں، وہ زیادہ دیر سائے میں بیٹھنے اور کام نہ کرنے کی متحمل نہیں ہوسکتیں۔ انہوں نے ہمیں بتایا کہ ’ہم صبح جلدی کام شروع کردیتے ہیں اور صبح 11 بجے تک کام مکمل کرنے کی کوشش کرتے ہیں‘۔ انہوں نے مزید کہا کہ وہ دوپہر کے کھانے کے وقت کام میں وقفہ کرتی ہیں، اس دوران وہ کھانا کھاتی ہیں اور آرام کرتی ہیں پھر شام کو دوبارہ کھیتوں کا رخ کرتی ہیں۔ ان کے مطابق ’ہم دن کے گرم ترین حصے سے اس طرح بچتے ہیں‘۔

اظہر سرکی ایک صحافی ہیں، ان کا کہنا ہے کہ ’جولائی کے بعد جیسے جیسے چاول کی فصل بڑھتی ہے ویسے ویسے موسم بھی گرم ہونے لگتا ہے، اس دوران دم گھٹتا محسوس ہوتا ہے اور سانس لینا مشکل ہوجاتا ہے‘۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Must Read

مایوس نہیں ہونا’ یہ نظام ضرور بدلے گا

تحریر؛ ناصف اعواناس وقت دیکھا جا سکتا ہے کہ ملک میں شدید سیاسی بحران ہے فریقین باہم دست گریبان ہیں اور...

حق کا انعام عقل سلیم

منشاقاضیحسب منشا وہ قافلے , وہ کارواں , وہ جماعتیں , وہ ادارے , وہ تنظیمیں جن...

عمران خان پورے کا پورا توشہ خانہ ہی کھاگئے: طلال چوہدری

 طلال چوہدری نے کہا کہ عمران خان نے ملک کا جو نقصان کیا ہے اس کے ازالے کے لیے قانونی کارروائی...

سابق وفاقی وزیر مرزا ناصر بیگ کا پی ٹی آئی میں شمولیت کا اعلان

لودھراں : پی پی 224 اور 228 کےضمنی الیکشن کی انتخابی مہم کے دوران سابق وفاقی وزیر مرزا ناصر بیگ نے...

واپسی کیلئے کسی لیگی رہنما کی اجازت نہیں چاہیے، نوازشریف کا حکم کافی ہے: اسحاق ڈار

سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا کہنا ہے کہ انہوں نے پاکستان واپسی کا فیصلہ نواز شریف کے کہنے پر کیا۔