Home پاکستان پی بی اے کی میڈیا کی آزادی کے خلاف حکومتی اقدامات کی...

پی بی اے کی میڈیا کی آزادی کے خلاف حکومتی اقدامات کی مذمت

پاکستان براڈ کاسٹر ایسوسی ایشن (پی بی اے) کی جانب سے حکومت کی جانب سے ’ادارتی مواد کنٹرول کرنے، آزادی رائے اور پاکستانی شہریوں کو معلومات کے حق سے محروم رکھنے کے متواتر اقدامات‘ کی شدید مذمت کی ہے۔

پی بی اے کی جانب سے جاری ایک بیان میں حکومت کے کچھ میڈیا اداروں کے خلاف اقدامات کا حوالہ دیا گیا جس کے نتیجے میں مالیاتی دباؤ ڈالا گیا اور پیشہ ورانہ خدمات انجام دینے میں رکاوٹیں پیدا کی گئیں۔مزید پڑھیں: صحافتی تنظیموں نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں پیکا آرڈیننس چیلنج کردیا

الیکٹرانک میڈیا کی نمائندہ تنظیم کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے اشتہارات پر پابندی سمیت پاکستان الیٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) کے ذریعے متعدد ٹی وی چینلز کو مسلسل شوکاز نوٹسز دینے کے اقدامات جاری ہیں۔

حکومت کے دیگر اقدامات میں مجموعی سالانہ ریونیو (جی اے آر) کے غیر قانونی بہانے کے تحت چینلز پر اربوں روپے کے ناجائز دعوے نافذ کرنا بھی شامل ہے۔

پی بی اے نے نشاندہی کی کہ ’حکومت نے سرکاری نمائندوں کے مخصوص چینلز پر آنے پر بھی پابندی عائد کی ہے، اس اقدام کا مقصد ادارتی مواد کنٹرول کرنا، آزادی اظہار رائے اور پاکستان کے شہریوں کو معلومات کے حق سے محروم کرنا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: نئے چیننلز کیلئے لائسنس کا اجرا، پیمرا اپنے موقف پر ڈٹ گیا

حکومت کے اقدامات کی مذمت کرتے ہوئے ایسوسی ایشن نے اس طرح کے تمام اقدامات جو آزادی اظہار رائے سمیت شہریوں کو معلومات کی آزادی کے حق کی مخالفت کرتے ہیں ان کے خلاف لڑنے کا عزم کیا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Must Read

test

test

صحابہ کرام اہلبیت امہات المومنین کی توہین پر قانون سازی

تحریر: محمد ریاض ایڈووکیٹآئین پاکستان کے تحت مملکت کا نا م اسلامی جمہوریہ پاکستان اور سرکاری مذہب اسلام ہے۔اسکے باوجود پاکستان...

مجھے اس دیس جانا ہے

منشاقاضیحسب منشا مجھ پر پہلی بار اس بات کا انکشاف ہوا جب میں نے نثری ادب میں...

دنیا کا سب سے بڑا مقروض ملک ہونے کے باوجود جاپان ڈیفالٹ کیوں نہیں کرتا؟

گزشتہ سال ستمبر کے آخر تک جاپان اس حد تک مقروض ہو چکا تھا کہ قرضوں کے اس حجم کو سُن...

پی ٹی آئی کا سندھ اسمبلی سے مستعفی نہ ہونے کا فیصلہ

کراچی (سٹاف رپورٹر)پاکستان تحریک (پی ٹی آئی) نے سندھ اسمبلی سے مستعفی نہ ہونے کا فیصلہ کرلیا۔