Home بلاگ ماحول اثر انداز ہوتا ہے۔

ماحول اثر انداز ہوتا ہے۔

تحریر:صادق انور میاں

انسان جس ماحول میں رہتا ہے ۔اسی کا اثر ان پر ہوتا ہے۔ماحول اس دنیا میں بڑا اثر انداز ہوتا ہے۔تمام عالم میں مختلف ماحول ہوتے ہیں۔ہر ایک ملک کا اپنا ایک ماحول ہوتا ہے ۔اور اسی میں وہ لوگ زندگی بسر کرتے ہیں۔میں چونکہ ایک پاکستانی ہوں۔اور پھر پاکستان میں ایک پشتون معاشرے سے تعلق رکھتا ہوں ۔تو میں اپنے ارد گرد کے ماحول کا تذکرہ کروں گا۔اج کل ہم جس دور میں بسر کر رہے ہیں ۔اور جس ماحول میں ہم رہتے ہیں بڑا ہی نازک ہے۔چھوٹے تو کیا بڑوں پر بھی ہمارا ماحول اثر انداز ہوا ہے۔میں بات کرنے والا ہوں آج کی نوجوان کی جو غلط ماحول کی طرف جاتاہے۔اج کل اگر اپ لوگ دیکھے تو ہر دوسرا بچہ نشے کا عادی ہوچکا ہے۔کوئی چرس کا نشہ کرتا ہے تو کوئی ائس کا مختلف قسم کی نشہ اور چیزوں کا استعمال ہمارا نوجون نسل کرتا ہے۔اوریہ ایک معمول بن چکاہے۔یہ چیزیں ہمارے ارد گرد کے ماحول میں ان بچوں کو بڑی آسانی سے ملتی ہے ۔اور بچوں کی رسائی ان چیزوں کی جانب بڑی اسانی سے ہوتی ہے۔مطلب بڑی اسانی کے ساتھ یہ نشہ حال کرسکتے ہیں۔بچہ اگر صحیح ماحول کی طرف جاتا ہے تو یہ ان کی والدین کی ہمت ہوتی ہے اور ان کی محنت ہوتی ہے۔اور اگر بچہ غلط راستہ اختیار کر لیتا ہے تو بھی یہ ان کی والدین کی لاپرواہی ہوتی ہے۔بچے جب 13سال کے ہوتے ہیں تو ان کی زہن میں مختلف قسم کے خیالات اتے ہیں۔13سال سے 19کے درمیان کی عمر کو انگریزی میں teenageکہتےہیں۔تو اس عمر میں بچہ اپنے جسم پر قابوں نہیں رکھ سکتا ہے۔اس عمر میں اگر کوئی باپ تھوڑا بے خبر ہوجاتا ہے تو بچہ نشے کی طرف مائل ہوتا ہے کیونکہ میں پہلے ہی بتاچکا ہوں کہ ماحول میں تو نشہ اسانی سے فراہم ہوتا ہے۔اور یہ باتیں جو میں کہہ رہا ہوں قابل غور باتیں ہیں۔جو کہ میں بہت ضروری سمجھتا ہوں۔ہر باپ کی یہ فرض بنتی ہیں کہ وہ اپنے بچوں پر کڑی نظر رکھا کریں تاکہ بچہ اس ماحول میں کہیں نشے کی طرف نہ جائے۔کہیں چوری کی طرف نہ جائے کہیں اور غلط کاموں کی طرف نہ جائیں۔بچوں کی زندگی کی روٹین بنانی چاہئیے کہ صبح سکول،دوپہر کو مدرسہ اور سہ پہر کو کوئی کھیل کرکٹ،فٹ بال وغیرہ ۔کیونکہ کھیل بھی ایک اہم رول ادا کرتی ہے۔اور رات کو جب بچہ عشاء کی نماز پڑھے تو ان کو پھر گھر سے باہر نکلنے کی اجازت نہ دینا۔کیونکہ یہ وہی وقت ہے جس میں بچہ نشے کی طرف جلد مائل ہوسکتا ہے ۔تو میں سب والدین سے استدعا کرتا ہوں کہ خدارا اپنے آپ پر رحم کریں اپنے بچوں کی مستقبل پر رحم کریں ۔اور اپنے بچوں کو خراب اور غلط ماحول سے بچنے کی کوشش کریں تاکہ مستقبل میں آپ کو پچھتانا نہ پڑھے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Must Read

test

test

صحابہ کرام اہلبیت امہات المومنین کی توہین پر قانون سازی

تحریر: محمد ریاض ایڈووکیٹآئین پاکستان کے تحت مملکت کا نا م اسلامی جمہوریہ پاکستان اور سرکاری مذہب اسلام ہے۔اسکے باوجود پاکستان...

مجھے اس دیس جانا ہے

منشاقاضیحسب منشا مجھ پر پہلی بار اس بات کا انکشاف ہوا جب میں نے نثری ادب میں...

دنیا کا سب سے بڑا مقروض ملک ہونے کے باوجود جاپان ڈیفالٹ کیوں نہیں کرتا؟

گزشتہ سال ستمبر کے آخر تک جاپان اس حد تک مقروض ہو چکا تھا کہ قرضوں کے اس حجم کو سُن...

پی ٹی آئی کا سندھ اسمبلی سے مستعفی نہ ہونے کا فیصلہ

کراچی (سٹاف رپورٹر)پاکستان تحریک (پی ٹی آئی) نے سندھ اسمبلی سے مستعفی نہ ہونے کا فیصلہ کرلیا۔