Home پاکستان الیکشن کمیشن کا 4 ماہ میں حلقہ بندیاں مکمل کرنے کا حکم

الیکشن کمیشن کا 4 ماہ میں حلقہ بندیاں مکمل کرنے کا حکم

کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) نے ڈیجیٹل مردم شماری کا انتظار کیے بغیر 4 ماہ میں حلقہ بندیاں مکمل کرنے کا حکم جاری کردیا ہے۔

چیف الیکشن کمشنر کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں الیکشن کمیشن نے ڈیجیٹل مردم شماری کا انتظار نہ کرنے اور 2017 کی مردم شماری کے تحت قومی و صوبائی اسمبلیوں کی حلقہ بندی کا آغاز کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

الیکشن کمیشن نے سیکریٹری الیکشن کمیشن کو 13 اپریل تک عام انتخابات کا مکمل ایکشن پلان پیش کرنے کی ہدایت اور 4 ماہ میں حلقہ بندیاں مکمل کرنے کا حکم دے دیا ہے۔

عام انتخابات کا انعقاد اکتوبر سے قبل ممکن نہیں ہوگا، الیکشن کمیشن

تحریر جاری ہے‎

پنجاب بلدیاتی انتخابات کے لیے فنڈز فراہم نہ کرنے پر الیکشن کمیشن کی جانب سے اظہار برہمی کی گئی جبکہ وفاقی سیکرٹری خزانہ اور چیف سیکرٹری پنجاب کو طلب کرلیا گیا۔

اجلاس کے دوران این اے 33 ہنگو میں ضمنی انتخاب 17 اپریل کو کروانے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔

ای سی پی کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ الیکشن کمیشن جمہوری عمل کے تسلسل اور شفافیت کے لیے آئینی کردار ادا کرتا رہے گا۔

انتخابات میں 90 روز سے زائد تاخیر آئین کی خلاف ورزی ہوگی، فواد چوہدری

واضح رہے کہ گزشتہ روز سپریم کورٹ میں ڈپٹی اسپیکر کی رولنگ سے متعلق فیصلہ سنانے سے قبل سماعت کے دوران چیف جسٹس نے چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجا کو روسٹرم پر بلایا اور الیکشن کے انعقاد کے حوالے سے استفسار کیا تھا، جس پر چیف الیکشن کمشنر نے کہا تھا کہ ہمیں 90 روز میں الیکشن کرانے کے لیے تیار رہنا چاہیے، الیکشن کمیشن ہر وقت انتخابات کرانے کے لیے تیار ہے لیکن ہمیں حد بندی کرنی ہیں، لہٰذا ہمیں 6 سے 7 ماہ چاہیے۔

چیف جسٹس نے مزید استفسار کیا تھا کہ کیا آپ نے پورے ملک کی حلقہ بندیاں کرنی ہیں یا کسی ایک علاقے کی؟

چیف الیکشن کمشنر نے جواب دیا تھا کہ پورے ملک کی حلقہ بندیاں ہونی ہیں جبکہ 6 سے 7 ماہ میں حلقہ بندیاں ہو سکیں گی۔

صدر مملکت نے 90 روز میں انتخابات کے انعقاد کیلئے الیکشن کمیشن کو خط لکھ دیا

انہوں نے کہا تھا کہ شفاف انتخابات کے لیے ضروری ہے کہ حلقہ بندیاں ہوں، فاٹا کے انضمام کے بعد خیبر پختونخوا کی تمام حلقہ بندیاں بدلیں گی، فاٹا کی 12 نشستیں ختم ہو کر خیبر پختونخوا میں ضم ہو گئی ہیں۔

چیف جسٹس نے ہدایت کی تھی کہ الیکشن کمیشن اپنی ذمہ داری پوری کرنے کے لیے مکمل اقدامات کرے۔

اس سے قبل صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی جانب سے ای سی پی کو عام انتخابات کے انعقاد کے حوالے سے لکھے گئے خط کے جواب میں الیکشن کمیشن نے کہا تھا کہ ہمیں اکتوبر 2022 میں شفاف انتخابات کے لیے حلقہ بندیاں کرنی ہیں، آئین و قانون کے مطابق اس کے لیے کم از کم اضافی 4 ماہ درکار ہیں۔

جوابی خط میں کہا گیا تھا کہ صاف شفاف اور غیر جانبدارانہ الیکشن کے لیے اضافی 4 ماہ درکار ہیں، الیکشن کا انعقاد اکتوبر میں ہی ممکن ہے۔

تین ماہ میں عام انتخابات کرانا ممکن نہیں، الیکشن کمیشن

واضح رہے کہ ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم سوری نے وزیراعظم کے خلاف تحریک عدم اعتماد مسترد کردی تھی جس کے بعد وزیراعظم نے 3 اپریل کو قومی اسمبلی تحلیل کرنے کا اعلان کردیا تھا۔

بعد ازاں صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے الیکشن کمیشن آف پاکستان کو عام انتخابات کے انعقاد کے حوالے سے خط لکھا تھا۔

خط میں الیکشن کمیشن کو آئین پاکستان کے تحت 3 اپریل 2022 کو قومی اسمبلی کی تحلیل کے 90 روز کے اندر الیکشن کرانے کے لیے تاریخ تجویز کرنے کا کہا گیا تھا۔

تاہم گزشتہ روز سپریم کورٹ نے ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری کی جانب سے وزیر اعظم عمران خان کے خلاف لائی گئی تحریک عدم اعتماد کو مسترد کرنے کی رولنگ اور صدر مملکت کے قومی اسمبلی تحلیل کرنے کے فیصلے کو غیر آئینی قرار دے دیا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Must Read

’کیا ہم واقعی آزاد ہیں؟

تحریر : ایم فاروق انجم بھٹہ سوچیۓ کہ اگر ہم واقعی آزاد ہیں تو اب بھی ہم...

جناح انمول ہے

منشاقاضیحسب منشا شاعر مشرق علامہ اقبال نے چراغ رخ زیبا لے کر اس ہستی کو تلاش کر...

پی سی بی نے تینوں فارمیٹ کیلئے 33 کھلاڑیوں کے سینٹرل کنٹریکٹ جاری کر دیے

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے تینوں فارمیٹ کے لیے 33 کھلاڑیوں کے سینٹرل کنٹریکٹ جاری کردیے ، ٹیم کے...

کراچی میں شدید بارشیں، انٹرمیڈیٹ کے 13 اگست کے پرچے اور پریکٹیکلز ملتوی

اعلیٰ ثانوی تعلیمی بورڈ کراچی نے شہر میں شدید بارشوں کے پیش نظر ہفتہ 13 اگست کو ہونے والے انٹرمیڈیٹ کے...

ٹکٹ کی مد میں 20 روپے زیادہ کیوں لیے؟ شہری 22 سال بعد مقدمہ جیت گیا

بھارتی شہری ریلوے ٹکٹ کی مد میں 20 روپے زیادہ لینے کے خلاف کیا گیا مقدمہ بلآخر 22 سال بعد جیت...