Home بلاگ لوڈشیڈنگ

لوڈشیڈنگ

ڈیرے دار
سہیل بشیر منج
لوڈشیڈنگ کسی بھی ملک کی معاشی ترقی کے لیے زہر قاتل کا درجہ رکھتی ہے سال 2013 سے پہلے ملک کو 20 سے 22 گھنٹے لوڈشیڈنگ کا سامنا تھا نیشنل گریڈ میں تقریبا گیارہ ہزار میگا واٹ بجلی کی کمی تھی جس کا نتیجہ یہ نکلا کہ ملک کی تمام انڈسٹری بند ہو گئی لوگ دن رات کی بے
آرامی کی وجہ سے نفسیاتی مریض بن چکے تھے ملک میں بجلی کی بد ترین لوڈ شیڈنگ نے ملک کو مایوسی کی حد تک پہنچا دیا تھا
انٹرنیشنل بائیر پاکستان سے اپنا کاروبار لپیٹ کر بنگلہ دیش چلا گیا تھا الیکشن میں نواز شریف کی حکومت آئی تو انہوں نے پہلے ہی دن سے بجلی پر کام شروع کردیا ملک میں بجلی کی پیداوار بڑھانے کے لئے بہت سے پروجیکٹس پر ایک ساتھ کام شروع کر دیا گیا جس میں ہائیڈرو پاور پروجیکٹ کول پاور پلانٹ ،سولر انرجی اور ونڈ ملز شامل تھے حکومتی مشینری کی دن رات محنت کے نتیجے میں آخر کار مرحلہ وار لوڈشیڈنگ پر قابو پالیا گیا پہلے مرحلے میں انڈسٹری دوسرے مرحلے میں بڑے شہر اور اس کے بعد ديہی علاقوں کو بھی لوڈشیڈنگ فری کر دیا گیا تیسرے مرحلے میں سابقہ حکومت نے نیشنل گریڈ میں سر پلس بجلی چھوڑی ملک میں انڈسٹری کا جام پہیہ پھر سے چل پڑا بڑے شہروں کی شاہراہوں اور مارکیٹس کو برقی قمقموں سے روشن کردیا گیا شہروں میں سٹریٹ لائٹس کی تنصیب اور مرمت
کرکے ملک پیشتر گلی کوچوں کو روشن کر دیا گیا
کہ سال 2018 آگیا اسٹبلشمنٹ کی نواز شریف کے ساتھ نہ بنی جس کے نتیجے میں انہوں نے عمران خان جیسے نااہل ٹولے کی حکومت ترتیب دے کر قوم پر مسلط کردیا
جیسے ہی
خان صاحب حکومت میں آئے چور چور ڈاکو ڈاکو کا چورن بھیج کر قوم کو بیوقوف بنانے لگے قوم کو جھوٹ ،دھوکا دہی، مکاری، عیاری، فراڈ چوری، کرپشن ،مہنگائی ،لوٹ کھسوٹ کے ذریعے بے حال کر دیا خان صاحب بہت دور اندیش آدمی گزرے ہیں وہ جانتے تھے کہ چور
دروازے سے لوگوں کے پاس زیادہ وقت نہیں ہوتا اس لیے انہوں نے اپنی بہترین ٹیم تشکیل دی جن میں انیل مسرت،زلفی بخاری ، پنکی پیرنی بمعہ اہل و عیال، فراح گوگی ، شہزاد اکبر اور ان جیسے بہت سوں کو ساتھ ملا کر پشن کا بازار گرم کیا اور اس مختصر سے وقت میں بڑے بڑے ٹارگٹ حاصل کرنے میں مصروف عمل رہے اور یہ بھی بھول گئے کہ انہیں وزیراعظم کس لیے رکھا گیا ہے خان صاحب کی مصروفیت نے انہیں یہ بھی بھلا دیا کہ جس طرح ہر چلنے والی مشین کو مینٹیننس کی ضرورت ہوتی ہے اسی طرح بجلی کے کارخانوں کو بھی مینٹینس کے بغیر نہیں چلایا جا سکتا سابقہ وزیر اعظم اور ان کے وزیر توانائی حماد اظہر کی قابلیت ملاحظہ فرمائیں کہ
ایل این جی کے چار پلانٹ 13 دسمبر 2022 سے بند پڑے جن میں نندی پور،
FKPCL
اور فیصل آباد
آر ایل این جی پر چلنے والے کارخانے 960 میگاواٹ یکم اپریل سے بند ، کیپکو پارٹ لوڈ چالیس فیصد بہتر ایفیشنسی والا 2855 میگاواٹ 8
اپریل سے بند،
فرنس آئل پارٹ لور ڈ جامشورو اور مظفر گڑھ
2340
میگاواٹ
8
اپریل سے بند
اینگرو تھر کول دو
یونٹ 13مارچ 2022
سے بند
RLNG
پر چلنے والے کارخانے 960میگا واٹ یکم اپریل سے بند

پورٹ قاسم 613 میگاواٹ اکتیس مارچ سے بند
نااہلی اور عدم توجیہی کی حد ملاحظہ فرمائیے کہ گدو جنکو 747
میگا واٹ 12 فروری 2021
سے بند پڑا ہے اگر یوں بیان کر لیا جاے کہ 5820 میگا واٹ پلانٹ فیول نہ ہونے کی وجہ سے
جبکہ
1284
میگاواٹ پلانٹس مینٹینینس کی وجہ سے بند پڑے ہیں (یہ تمام
( تر معلومات وزارت توانائی سے تصدیق شدہ ہیں
یہ تمام تفصیلات جو آپ کی خدمت میں پیش کرنے کی کوشش کی امید ہے آپ کو یہ معلوم ہو گیا ہو گا
کہ تبدیلی سرکار کی توجہ کا مرکز صرف کرپشن تھی
انشاء اللہ بہت جلد آپ اس کو کوفت سے نجات مل جائے گی کیونکہ مسلم لیگ کی حکومت کا سابقہ ریکارڈ دیکھا جائے تو انہیں جس دن حکومت ملی تھی اس وقت نیشنل گریڈ کو
12000
میگا واٹ شارٹ فال کا سامنا تھا انھوں نے
اس پر قابو پا لیا تھا یہ شارٹ فال تو محض
7104
میگاواٹ ہے
اس وقت تقریبا دس دنوں میں لوڈشیڈنگ پر کافی حد تک قابو پایا پالیا گیا ہے اور آئندہ چند دنوں میں لوڈشیڈنگ پر مکمل قابو پالیا جائے گا اور آئندہ چند دنوں میں انشاءاللہ ملک کو پھر سے لوڈشیڈنگ فری کر دیا جائے گا اگر
اگلی حکومت بھی مسلم لیگ کو ہی مل گئی تو امید ہے ملک میں بجلی کی پیداوار ا تنی ہو جائے گی کہ ملکی ضروریات کے لیے بہت سالوں تک کافی ہوگی
آج کل سوشل میڈیا پر تبدیلی سرکار کے سوشل میڈیا سیل اور ان کے پیروکاروں نے لوڈشیڈنگ کا ذمہ دار 2 ہفتے پہلے برسراقتدار آئی حکومت قرار دے کر ادھم مچا رکھا ہے ویسے تو ان کی پرورش اور ان کی تربیت انہیں حقائق سے دور رہنے کی ترغیب دیتی ہے لیکن پھر بھی اگر یہ تحریر قوم یوتھ کے کسی فرد کی نظروں سے گزرے تو برائے کرم اسے نظر انداز کر دیا جائے یہ کہ یہ تو محض معلومات تھیں جو اپنے قارئین کرام تک پہنچانی تھیں اس لئے برائے کرم گالیوں سے گریز کریں شکریہ

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Must Read

دعا زہرا کی عمر 15سے 16سال کے درمیان ہے: میڈیکل بورڈ کی رپورٹ

کراچی کی مقامی عدالت کے حکم پر میڈیکل بورڈ نے دعا زہرا کی عمرکے تعین سے متعلق رپورٹ جمع کرادی۔

کپتان سمیت قومی ہاکی کھلاڑیوں کا نوکریاں دینے کا مطالبہ

کامن ویلتھ گیمز کی تیاریوں کے سلسلے میں پاکستان ہاکی ٹیم کا ٹریننگ کیمپ ان دنوں لاہور میں جاری ہے لیکن...

ملک بھر میں سندھ کورونا کیسز میں سب سے آگے

ملک بھر میں یومیہ رپورٹ ہونے والےکورونا کیسز میں سندھ سب سے آگے ہے۔ نیشنل کمانڈ اینڈ...

رمیز راجا اور سابق کرکٹرز کی ملاقات کی اندرونی کہانی

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئر مین رمیز راجاکی کراچی میں سابق کرکٹرز کے ساتھ ملاقات کی دلچسپ اندرونی کہانی منظر عام...

عمران خان نے اوورسیزپاکستانیوں کے ووٹ سے متعلق ترمیم کو چیلنج کردیا

سابق وزیراعظم عمران خان نے اوورسیزپاکستانیوں کے ووٹ سے متعلق ترمیم کو سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا۔