Home بلاگ طب کی جدیدیت،دل کا بائی پاس چھوٹے کٹ سے ممکن،ڈاکٹر عقیل احمد...

طب کی جدیدیت،دل کا بائی پاس چھوٹے کٹ سے ممکن،ڈاکٹر عقیل احمد کی ٹیم کا کارنامہ

میری بات۔۔۔مدثر قدیر

گزشتہ دنوں پاکستان کے شعبہ صحت میں تاریخی انقلابی حثیت کا حامل دل کا بائی پاس آپریشن ہوا جسے مریض کی چھاتی کھولے بغیر ایک کٹ کے ذریعے پایہ تکمیل تک پہنچایا گیا اس آپریشن کو میں اس لیے تاریخی اہمیت کا حامل کہتا ہوں کہ یہ آپریشن شیخ زید ہیپتال میں ہوا جو سرکاری ہسپتال ہے اس سے قبل یہ طریقہ علاج پرائیویٹ ہسپتال میں ہورہا ہے جہاں پر اس آپریشن کی فیس کسی غریب آدمی کے بس کی بات نہیں مگر شیخ زید میں ہونے اوالے ان آپریشنز کی فیس سرکاری حساب سے آٹے میں نمک کے برابر ہے اس حوالے سے جب میں انچارج شعبہ کارڈک سرجری شیخ زید ڈاکٹر عقیل احمد سے گفتگو کی تو ان کا کہنا تھا کہ یہ طریہ علاج دنیا بھر میں 1960ء سے رائج ہے مگر ہمارے ہاں اسے پہنچنے میں کچھ وقت لگا کیونکہ اول تو اس پر توجہ نہیں دی گئی اور دوسرا اس کا شمار اسپشیلٹی میں آتا ہے جس کے لیے انتہائی تربیت ہونا لازم ہے اور آج ہم اس مقام پر کھڑے ہیں کہ اس عمل جراحی کو سیکھ کر عوام کی خدمت کررہے ہیں اور نئے لوگوں کو اس عمل کی ٹریننگ دے رہے ہیں جس کا انتظام ہم نے پاکستان سوسائٹی آف کارڈیوویسکولر اینڈ تھیورک سرجری (دل اور چھاتی کی سرجری) کی 3روزہ کانفرنس میں کیا تھا جس کا انعقاد گزشتہ د نوں شیخ زید ہسپتال میں ہوا جس کے لیے امریکہ سے ماہر امراض دل پروفیسر ڈاکٹر فیاض حسین ہاشمی نیں شرکت کی اور ان سے میرے سمیت دیگر طبی ماہرین نے بھی بہت کچھ سیکھا اور میں اس کانفرنس کے انعقاد اور آپریشنز کے لیے دی جانے والی سہولیات پر ایڈمنسٹریٹر شیخ زید ڈاکٹر اکبر حسین اور چئیرمین و ڈین شیخ زید پروفیسر ڈاکٹر صبغہ ذولفقار کا شکریہ ادا کرتا ہوں جن کی وجہ سے اس کانفرنس کا انعقاد کامیابی سے ہم کنار ہوا۔
ڈاکٹر عقیل احمد نے اپنی گفتگو میں اس حوالے سے مزید بتایا کہ طریقہ علاج میں دل کے بائی پاس سمیت دل کے وال کی سرجری بھی کی جاتی ہے،دل کے بائی پاس کے لیے چھاتی کے بائیں جانب جبکہ والو کی سرجری کے لیے دائیں جانب چھوٹا سا سوراخ کیا جاتا ہے جس کے بعد نئے گیجٹس کی مدد سے آپریشن کو سرانجام دیا جاتا ہے اس موقع پر میرا ڈاکٹر عقیل سے کہنا تھا کہ روایتی بائی پاس تو 4گھنٹے سے زائد کا وقت لیتا ہے اس آپریشن کے لیے کتنا وقت درکار ہوتا ہے جس پرانھوں نے بتایا کہ اس آپریشن کا دورانیہ بھی 4گھنٹے تک محیط ہوسکتا ہے جس میں انستھزیا کے ڈاکٹرز ایک گھنٹہ لیتے ہیں جبکہ ہمارا کام بھی ایک گھنٹہ ہی ہوتا ہے اور باقی وقت آپریشن کے بعد اور آپریشن سے پہلے تیاری میں لگتا ہے۔
اس آپریشن کی سب سے بڑی بات یہ کہ اس میں اول تو مریض کو خون کی ضرورت نہیں پڑتی اگر پڑے بھی تو اسے خون کا سفید حصہ لگایاجاتا ہے تاکہ اس کا مدافعتی نظام تیز ہوسکے،آپریشن کے بعد درد کی نوعیت کے حوالے سے بات کرتے ہوئے ڈاکٹر عقیل نے بتایا کہ گزشتہ رات ہم نے ایک بچی کا بائی پاس آپریشن کیا اور صبح جب میں اس سے ملنے گیا تو اس سے پوچھا کہ تم بیڈ سے اتری ہو تو اس نے کہا کہ سسٹر نے مجھے اترنے نہیں دیا کہ تمھارا بائی پاس آپریشن ہوا ہے ابھی لیٹی رہو مگر میں نے سسٹر کو بتایا کہ میرا تو ابھی آپریشن ہونا ہے کیونکہ مجھے درد محسوس نہیں ہورہی آپریشن کے بعد تو درد محسوس ہوتی ہے ناں۔کہنے کا مطلب ہے کہ اس آپریشن میں درد کی شدت نہایت معمولی اور بعض اوقات نہیں بھی ہوتی مریض 3روز وارڈ میں رہ کر گھر شفٹ ہوجاتا ہے اور ایک ہفتے بعد وہ اس قابل ہوجاتا ہے کہ اپنا کام کرسکے خواہ اس کا کام کتنا ہی مشقت طلب کیوں نہ ہو۔
ڈاکٹر عقیل احمد کی گفتگو سے پتہ چلتا ہے کہ دل کے بائی پاس کی اس جدیدجراحی کی بدولت مریض کی ریکوری اس کی صحت یابی کا تناسب تیز ترین ہوتا ہے اور دنوں میں انسان اس قابل ہوجاتا ہے کہ اپنے روز مرہ کے معمولات سرانجام دے سکے اس موقع پر انھوں نے اس امر کا اظہار بھی کیا کہ ہمارا عزم ہے کہ ہم آنے والے دنوں میں شیخ زید ہسپتال میں دل کے ٹرانسپلانٹ کی جانب بڑھیں اور اس حوالے سے اپنا کردار ادا کریں،دل کا ٹرانسپلانٹ ایک مشکل اور پیچیدہ عمل ہے مگر ہم نے انسانیت کی خدمت کا حلف اٹھایا ہے اور ہماری کوشش ہے اس مقصد کو حاصل کرکے ملک کی تعمیر وترقی میں اپنا کردار ادا کرسیکیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Must Read

ماہ زوالحجہ عبادات و فضیلت

تحریر رخسانہ اسد حج اسلام کا پانچواں رکن ہے حکم خداوندی کے سامنے سرتسلیم خم کرنے کیلے...

ڈائمنڈ جوبلی اور صوبائی محتسب

تحریر؛ روہیل اکبرمبارک ہو ہم اپنی آزادی کے 75 سال مکمل کر نے والے ہیں گذرے ہوئے ان سالوں کی ڈائمنڈ...

چھٹا رکن

تحریر؛ پروفیسر محمد عبداللہ بھٹیجب بھی کوئی اہل حق خدائے بزرگ و برتر کے کرم اورخاص اشارے کے تحت جہالت کفر...

چور نگری

تحریر؛ ناصر نقوی جب ایماندار، فرض شناس اور محنتی کو اس کی محنت و مشقت کا صلہ...

کراچی میں تیز بارش کب سے ہوگی؟ محکمہ موسمیات نے پیشگوئی کردی

کراچی: محکمہ موسمیات نے شہر میں 2 جولائی سے تیز بارش کا امکان ظاہر کیا ہے۔ چیف...