Home بلاگ جاگتے رہنا زاد راہ

جاگتے رہنا زاد راہ

سید علی رضا نقوی

پاکستان میں 75برسوں سے انتخابات کے نام پر طاقتوروں کی دھونس دھاندلی کے مظاہرے ہوتے آئے ہیں ،لوگ ،لسانی ،علاقائی ،برادری ازم اور فرقوں کے نام پراپنے ووٹ سے غلط انتخاب کرکے پچھتاوے کے غم میں ڈوب جاتے ہیں ،سیاسی وابستگیوں کا چلن کسی حد تک ٹھیک ہے مگر اس میں امیدوار کی اہلیت کو پرکھنے کی بھی اشد ضرورت ہوتی ہے اگر باصلاحیت باوفا ،محب وطن قیادت کا انتخاب کرلیتے تو پھر آج پاکستان کے حالات یکسر مختلف ہوتے ،پنجاب کے اب 20 حلقوں میں 17جولائی کو ضمنی الیکشن کی تیاری ہوچکی ،ان حالات میں 75برس سے غلط اندازوں پر اپنے ووٹ ضائع کرنے کی روایت کو دفن کرنے کا وقت آگیا ہے ،اب اگر اس بار بھی ان حلقوں کے عوام نے اپنے ضمیر کی آواز پر لبیک کہتے ہوئے صائب فیصلہ نہ کیا تو پھر تاریخ انہیں کبھی معاف نہیں کرے گی ،یہی 20 حلقوں کے ضمنی انتخابات ایک طرح سے آئندہ عام انتخابات کے حوالے سے بھی فیصلہ ساز ثابت ہونگے ،اس حوالے سے انتخابات کے شفاف کروانے کی خاطر تمام مروجہ قواعدِ وضوابط کو ملحوظ خاطر رکھنا ہوگا، کسی طور بھی میرٹ سے ہٹ کر کوئی کام کرنے کی راہ میں عوام کو مزاحمت کرنا چاہئے کسی بھی سیاسی جماعت کے تحفظات کو نظرانداز نہیں کرنا چاہئے اس حوالے سے پاکستان تحریک انصاف نے پنجاب اسمبلی کی 20 نشستوں پر 17 جولائی کو ہونے والے ضمنی الیکشن میں مبینہ حکومتی مداخلت کے خلاف درخواست الیکشن کمیشن میں جمع کروا تھی ۔اسلام آباد میں تحریک انصاف کے رہنماؤں نے پارٹی کے ایڈیشنل جنرل سیکریٹری عمر ایوب کی قیادت میں درخواست الیکشن کمیشن میں جمع کرواتے ہوئے الزام عائد کیا تھا کہ ’پنجاب کے مختلف حلقوں میں حکومت مسلم لیگ (ن) کے امیدواروں کے حق میں مداخلت کر رہی ہے جس سے آزادانہ اور شفاف انتخابات کا انعقاد خطرے میں پڑ گیا ہے۔‘درخواست میں مختلف حلقوں میں ضلعی انتظامیہ اور پولیس کی مداخلت کی شکایت کی گئی ہے جبکہ کئی علاقوں میں ووٹر لسٹوں میں ردوبدل کی بھی شکایت کی گئی ہے۔
درخواست جمع کروانے کے بعد الیکشن کمیشن کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمر ایوب نے بتایا کہ ’الیکشن کمیشن قواعد کے برعکس ضمنی الیکشن سے قبل پنجاب حکومت من چاہے افسران کی ٹرانسفر اور پوسٹنگ کر رہی ہے تاکہ نتیجہ اپنے حق میں کر لے۔‘ان کا کہنا تھا کہ مختلف حلقوں میں ’جعلی‘ ترقیاتی منصوبوں کا اعلان کیا جا رہا ہے اور کہیں بجلی کے کھمبے اور ٹرانسفامر پہنچائے جا رہے ہیں تو کہیں گیس کے پائپ۔ ’یہ پرانے ہتھکنڈے استعمال کر رہے ہیں مگر ہمارے امیدوار ڈٹے ہوئے ہیں۔‘انہوں نے الزام عائد کیا کہ ڈی پی او جھنگ سردار غیاث گل بھی الیکشن میں اثر انداز ہو رہے ہیں۔ ایک سرکاری ملازم ہوتے ہوئے قانون کے مطابق وہ ایسا نہیں کر سکتے۔عمر ایوب نے یہ الزام بھی عائد کیا کہ راجن پور کے ڈپٹی کمشنر بھی ن لیگ کے امیدوار کی انتخابی مہم چلا رہے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ پنجاب اسمبلی کے حلقہ پی پی 234 اور 272 میں پی ٹی آئی کے امیدواران معظم جتوئی اور یاسر جتوئی کے خلاف سرکاری مشینری استعمال کرتے ہوئے ایف آئی آرز درج کروائی جا رہی ہیں اور ہراساں کیا جا رہا ہے۔ان کے مطابق ’ہم نے الیکشن کمیشن کے سامنے ثبوت رکھے کہ پی پی 140 شیخوپورہ میں ایک بلاک میں الیکشن شیڈول کے بعد ووٹنگ لسٹ میں تبدیلی کرکے کُل ووٹرز کو 2239 سے بڑھا کر 5572 کر دیا گیا ہے۔ یہ سب دھاندلی کے چکر میں ہیں ہم یہ نہیں کرنے دیں گے اس لیے الیکشن کمیشن کے سامنے درخواست دی ہے۔‘
ان کا کہنا تھا کہ سرکاری مشینری کے ذریعے حکومتی امیدوار کا ساتھ دینا، یہ برداشت نہیں کریں گے، الیکشن کمیشن نوٹس لے اور قانونی چارہ جوئی کرے۔پی ٹی آئی رہنما ریاض فتیانہ کا کہنا تھا کہ آئین کے آرٹیکل 218 کے تحت صاف شفاف الیکشن عوام کا بنیادی حق ہے۔ ہمارے پہلے بھی تحفظات تھے۔ حمزہ شہباز کو نگران وزیراعلی نہیں بنانا چاہیے تھا۔ان کے بقول ’پولیس اور ضلعی انتظامیہ انتخابات پر اثرانداز ہو رہی ہے۔ لاہور ، جھنگ، ڈیرہ غازی خان، رحیم یار خان اور لودھراں کی انتظامیہ زیادہ اثر انداز ہو رہی ہے۔‘ان کا کہنا تھا 25 مئی کو الیکشن شیڈول آ یا ہے اور اس کے بعد لودھراں میں ایس ایچ اوز تبدیل کیے گئے۔ ریٹرننگ آفیسر کے پاس شکایت کی تو انہوں نے کہا کہ میرے اختیار میں نہیں۔اسی طرح کے مزید کئی الزامات برسر اقتدار جماعت پر پی ٹی آئی کی اس درخواست میں عائد کئے گئے تاہم اس حوالے سے جو کچھ اب تک ہوا وہ سب عوام کے سامنے ہے ،ان حالات میں اب ان حلقوں کے عوام پر بھاری ذمے داری آن پڑی ہے کہ وہ ان انتخابات کو شفاف اور ہر طرح کی دھاندلی سے پاک بنانے کے لئے اپنا کردار نبھائیں ،سب سے اہم بات یہ ہے کہ 75برس سے سوئے ہوئے اپنے ضمیر بھی جگائیں کیونکہ اس غفلت کی نیند سے اب اگر اپنے حق رائے دہی کی خاطر بیدار نہ ہوئے تو پھر ملک میں عوام کو ریلیف دینے کی کوئی صورت باقی نہیں رہے گی ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Must Read

پاکستان کی ساکھ خراب کرنے والوں کے شر سے محفوظ رہنے کی ضرورت

اداریہ پاکستان میں الزام تراشیوں سے مخالف کو زچ کرنے کا عمل بہت پرانا ہے تاہم اب...

گجرات ڈویژن اور حافظ آباد کی عوام کا فیصلہ؟

تحریر؛ راؤ غلام مصطفیوزیر اعلی پنجاب چوہدری پرویز الہی نے گجرات کودسویں ڈویژن کا درجہ دینے کی منظوری کے بعد باقاعدہ...

عالمی معیشت میں خاندانی کاروبار

تحریر؛ اکرام سہگلدنیا بھر میں خاندانی فرموں کا غلبہ اب اچھی طرح سے قائم ہے: عوامی طور پر تجارت کی جانے...

گجرات ڈویژن اور انسانی ہمدردی

تحریر؛ روہیل اکبرگجرات پنجاب کا 10واں ڈیژن بن گیاجس سے وہاں کے لوگوں کو سہولیات ملیں گے اب انکا اپنا نظام...

ملک بھرمیں PTCL کی انٹرنیٹ سروسز متاثر

لاہور(سٹاف رپورٹر)ملک بھر میں پی ٹی سی ایل کی سروسز ڈاؤن ہو گئیں۔ پی ٹی سی ایل...