Home بلاگ سخت فیصلے اور اصول

سخت فیصلے اور اصول

روداد خیال صفدر علی خاں

پاکستان کے دل لاہور میں مسلم لیگ ن کو چالیس برسوں بعد اپنے سخت فیصلوں اور اقتدار کے وقتی فائدے کی خاطر پالیسی میں لچک نے جیت کو ہار میں بدل دیا ،دیکھا جائے تو ملکی معیشت کے حوالے سے سخت فیصلے جو بظاہر غیر مقبول تھے انکے سیاست پر بہر حال اثرات مرتب ہونا تھے ،اسی طرح ضمنی الیکشن میں ٹکٹوں کی تقسیم کے وقت لچک پیدا کرنے کے فیصلے نے بھی انکی سیاست کو مقبولیت کے حوالے سے نقصان پہنچایا ۔پی ٹی آئی کے منحرفین کو ن لیگ کے نوازنے کا عمل بھی ووٹرز کے لئے پسندیدہ نہیں رہا ،ن لیگ کے سخت فیصلوں نے عام ووٹرز کو ہوشربا مہنگائی کے سیلاب میں پھینک دیا جس کے فوری مابعد منفی اثرات پٹرول کی قیمتوں میں معمولی کمی کوئی واضح مثبت تبدیلی نہ پاسکی کیونکہ یہ ریلیف بڑھائی جانے والی قیمتوں کے مقابلے میں بہت کم ہے اور ایسے ہی ہے جیسے اونٹ کے منہ میں زیرہ ،پنجاب میں چالیس برسوں کی ن لیگ کی ساکھ باقی نہ رہنے کا المیہ سامنے ہے ،سیاست میں نشیب و فراز آتے رہتے ہیں اس حوالے سے ابھی عام انتخابات میں کافی وقت پڑا ہے اگر ن لیگ اپنی غلطیوں کا درست طریقے سے ازالہ کرکے الیکشن کی بھرپور تیاری کرلے تو یہ بڑی بازی جیتی بھی جاسکتی ہے ۔حالیہ ضمنی الیکشن کے حوالے سے دیکھا جائے تو پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے منحرف اراکین کے ڈی سیٹ ہونے سے خالی ہونے والی 20 نشستوں پر ضمنی انتخابات کے غیرحتمی اور غیرسرکاری نتائج سامنے ہیں جہاں پی ٹی آئی کو مسلم لیگ (ن) پر واضح برتری حاصل ہے اور اب تک 15 نشستیں جیت لی ہیں۔غیرسرکاری اور غیرحتمی نتائج کے مطابق پی پی- 167 لاہور میں پی ٹی آئی کے امیدوار کے شبیر گجر 40 ہزار 511 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے جہاں مسلم لیگ (ن) کے ٹکٹ پر الیکشن لڑنے والے منحرف امیدوار نذیر چوہان 26 ہزار 472 ووٹ لے سکے۔اسی طرح لاہور کے پی پی-158 میں بھی پی ٹی آئی کے میاں اکرم عثمان 37 ہزار 463 ووٹ حاصل کرکے جیت گئے۔پی پی-158 لاہور میں مسلم لیگ (ن) کے امیدوار رانا احسن 31 ہزار 905 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔غیرحتمی اور غیرسرکاری نتائج کے مطابق پی ٹی آئی نے پی پی-83 خوشاب، پی پی-217 ملتان، پی پی-288 ڈیرہ غازی خان اور پی پی-202 ساہیوال میں کامیابی حاصل کرلی ہے۔پاکستان مسلم لیگ (ن) نے لاہور، بہاولنگر،مظفرگڑھ اور راولپنڈی میں کامیابی حاصل کی جبکہ لودھراں کی ایک نشست پر آزاد امیدوار کامیاب ہوئے۔پنجاب کے 20 حلقوں کے ضمنی انتخابات میں پولنگ کا عمل صبح 8 بجے شروع ہوا جو بلاتعطل شام 5 بجے تک جاری رہا، اس دوران بعض مقامات پر لڑائی جھگڑوں کی اطلاعات بھی سامنے آئیں ۔
پنجاب اسمبلی کی جن 20 نشستوں پر ضمنی انتخابات ہوئے ہیں ان میں لاہور کی 4، جھنگ، لودھراں اور مظفر گڑھ کی 2، 2 جبکہ راولپنڈی، خوشاب، بھکر، فیصل آباد، شیخوپورہ، ساہیوال، ملتان، بہاولنگر، لیہ اور ڈیرہ غازی خان کی ایک، ایک نشست شامل تھی۔ادھر مسلم لیگ ن کی رہنما مریم نواز نے ضمنی الیکشن میں پی ٹی آئی کی برتری کو تسلیم کرتے ہوئے الیکشن کے عمل کو شفاف قرار دیا ہے ۔ن لیگ کی رہنما مریم نواز کی جانب سے ان حالات میں شکست تسلیم کرلینے کی بہت عمدہ مثال قائم ہوئی ہے کیونکہ قبل ازیں عموماً ہارنے والے مخالف فریق پر دھونس دھاندلی کے الزامات عائد کرتے ہوئے اپنی شکست کو تسلیم کرنے سے انکار کرتے رہے ہیں ،ن لیگ کی جانب سے ایک اچھی روایت ڈالی گئی ہے ۔ سیاست میں کچھ بھی حرف آخر نہیں ہوتا ،حالات تبدیل ہوتے رہتے ہیں ،تاہم غلطیوں کو تسلیم کرلینا ہی بہترین سیاسی بصیرت کا اظہار ہوتا ہے ،ن لیگ کی قیادت نے شکست تسلیم کرکے اپنی غلطیوں کے ازالے کی جانب بھی پیشرفت کرنے کا عندیہ دیا ہے ،غلطیوں کو سنوارکر یقینی طور پر ن لیگ آئندہ عام انتخابات میں پھر سے پنجاب کی بڑی سیاسی قوت بن کر سامنے آسکتی ۔ن لیگ کے پاس وفاق میں حکومت ہے اور پنجاب میں بہترین پرفارمینس دکھانے کی سہولت میسر ہے بلکہ ملک بھر میں اپنی بہترین کارکردگی سے عوام کے دل جیت کر سیاست میں اپنی دھاک بٹھائی جاسکتی ہے ۔ن لیگ کے پاس ابھی موقع اور مہلت موجود ہے ۔مہنگائی پر قابو پانے کی کاوشوں کو کامیابی سے ہمکنار کرکے ن لیگ پھر سے ہردلعزیز جماعت کے طور پر ابھرکر سامنے آسکتی ہے ،حالیہ ضمنی الیکشن نے ن لیگ کو مستقبل کی راہیں متعین کرنے کے حوالے سے حقیقت سے بھی آگاہ کیا ہے ان حالات میں ن لیگ کو حالات و واقعات کے تناظر میں سبق سیکھتے ہوئے اپنے سیاسی مستقبل کو محفوظ بنانے کا جو موقع ملا ہے فی الحال اسی کو غنیمت جانتے ہوئے اپنے ووٹ بینک کی حفاظت کے لئے حقیقی معنوں میں ووٹ کو عزت دینے کا چلن اختیار کرنا ہوگا ،اپنے سخت اقتصادی فیصلوں کی گرد سے تعمیروترقی کے نئے راستے نکال کر عوام کی خوشحالی کا اہتمام کرنا ہوگا ۔عوام کو ہر حال میں ریلیف دینے کے عزم کو اب عملی صورت دینے کی اشد ضرورت ہے ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Must Read

انتہائےشہادت امام حسین۴

تحریر: رخسانہ اسد لاہور شاہ است حسین، بادشاہ است حسین……دین است حسین، دین پناہ است حسین……سردادنداددست دردست...

نوشہرہ: گاڑی پر فائرنگ سے پی ٹی آئی رہنما اور ان کے بھائی زخمی ہوگئے

نوشہرہ میں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما معتصم باللہ کی گاڑی پر فائرنگ سے وہ خود اور ان...

ایم کیو ایم وفاق اور سندھ حکومت سے پھر ناراض، پالیسی پر نظر ثانی کا مطالبہ

متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) پاکستان نے وفاقی اور سندھ حکومت سے ناراضی کا اظہار کردیا۔

کراچی: مضر صحت کھانا کھانے سے 2 بچے جاں بحق، والدین کی حالت خراب ہوگئی

کراچی کے علاقے جوہر آباد میں گھر میں مبینہ طور پر مضر صحت کھانا کھانے سے 2 بچے جاں بحق جب...

اینہاں دا کاں تے چٹا ای رہنااے

روداد خیال : صفدر علی خاں اپنے اخبار کی اشاعت کا تسلسل جاری رکھنے کی خاطر سرگرم...