Home بلاگ پاک أرمی سرحدوں کی ضمانتپاک اورسیز معیشت کی امانت

پاک أرمی سرحدوں کی ضمانت
پاک اورسیز معیشت کی امانت

تحریر: عاشق علی جوئیہ

اورسیز پاکستانیوں کو درپیش مسائل
بیرون ملک مقیم پاکستانی سے مراد پاکستانی لوگ ہیں جو پاکستان سے باہر رہتے ہیں۔ ان میں وہ شہری بھی شامل ہیں جو دوسرے ملک میں ہجرت کر چکے ہیں اور ساتھ ہی پاکستانی نژاد بیرون ملک پیدا ہونے والے افراد بھی شامل ہیں۔ وزارت برائے سمندر پار پاکستانیوں اور انسانی وسائل کی ترقی کے مطابق، دسمبر 2017 کے اندازوں کے مطابق تقریباً 8.8 ملین پاکستانی بیرون ملک مقیم ہیں، جن کی اکثریت، 4.7 ملین سے زیادہ، مشرق وسطیٰ میں مقیم ہے۔ دوسری سب سے بڑی کمیونٹی 1.2 ملین کے قریب , برطانیہ میں رہتی ہے. اس کے بعد تیسرے نمبر پر ریاست ہائے متحدہ امریکہ (خاص طور پر نیو یارک سٹی، شکاگو اور نیو جرسی)۔ اقوام متحدہ کے اقتصادی اور سماجی امور کے محکمے کے مطابق، پاکستان دنیا میں 6 ویں سب سے بڑا تارکین وطن ہے۔ 2021 میں سمندر پار پاکستانیوں نے 26 فیصد اضافے کے ساتھ ریکارڈ ترسیلات بھیجیں اور 2021 میں یہ 33 بلین امریکی ڈالر تک پہنچ گئی۔
دنیا میں بہت سے ایسے ممالک ہے جن کی تاریخ کا ہم مطالعہ کریں تو صاف ظاہر ہوتا ہے کچھ عرصہ قبل دس،بیس، پچاس سال کچھ بھی نہیں تھے ایک نارمل ملک ہوا کرتے تھے جیسا کہ پاکستان ,افغانستان یا وہ ملک جو ترقی پزیر ممالک اسطرح کے ممالک ہوا کرتے تھے۔کچھ ایسے ممالک جنہوں نے ذیادہ ترقی کرلی ترقی کرنے کیلئے بہت مشقتیں کیں اور صحیح پالیسیاں اپنائی ایسے طور طریقے رولز بنائے اپنے ملک میں۔
جو أج کل ترقی یافتہ باعث فخر ممالک کہلاتے ہیں لیکن بدقسمتی کی بات ہے پاکستان میں عقل، شعور، پالیسی کی کمی نہیں ہے پالیسی کوامپلمنٹ کرانے کی ضرورت ہے.پاکستان میں بہت سے قانون ایسے ہے جو پڑھنے کی حد تک بہت ہی اچھے خوبصورت ہیں لیکن ان کو لاگو کر لیں تو بہت سے فوائد حاصل کر سکتے ہیں صرف کتاب اور آئین کی حد تک تو ہے۔ لیکن عمل درآمد نہیں کیا جاتا جس طریقے سے امپلمنٹ ہونا چاہیے.
أئیے جانتے ہیں!
اوورسیز پاکستانیوں کے کیا مسائل ہے؟حکومت پاکستان کیا ان کے مسائل کو حل کر چکی ہے؟ یا حل کر نے کیلئے کوشاں ہے یا پھر حکومت پاکستان تقریر کی حد تک رہ گئی لیکن پریکٹیکل نہیں کر رہی۔
دیار غیر پاکستانیوں کو کیسے لولی پاپ دیا جاتا ہے حکومت پاکستان کی طرف سے اوورسیز پاکستانیوں کیلئے بہت سی الیکٹرانک ایپ سسٹم سروسز متعارف کرائی گئی.جو پردیس میں بیٹھ کر اپنی شکایات حل کروا سکیں پاکستان میں مثلاً
سٹیزن پورٹل: جب اس ایپ میں اپ اپنی شکایت کا اندراج کرتے ہیں تو چالیس دن کا آپ کو ٹائم دیا جاتا ہے کہ چالیس دن کے بعد آپ کی شکایات خود بخود حل ہو جائے گی. جب چالیس دن مکمل ہونگے آپ کو جواب آئے گا بغیر ثبوتوں بغیر تحقیق کیے بغیر انویسٹیگیشن “آپ کو ریلیف نہیں مل سکتا”
“شکایت جھوٹی و بے بنیاد پائی گئی”
چالیس دن ضائع کرنے کے بعد یہ لولی پاپ اتا ہے۔
آئی جی پی کمپلین سینٹر 1787: اگر آپ اس فورم کی شکایات کرتے ہیں متعلقہ پولیس اسٹیشن کی پولیس والے آپ کے مخالف ہو جائیں گے.
وفاقی محتسب سیکرٹریٹ:
السلام علیکم ہم معذرت خواہ ہیں کہ آپ کی دائر کردہ شکایت
وفاقی محتسب سیکرٹریٹ
کے قانون کے مطابق دائرہ اختیار میں نہ ہونے کی وجہ سے خارج کر دی گئ ہے.
اور

  • ادارہ او پی ایف
    *ادارہ او ایس پی
    ان کا تو صاف جواب ہوتا ہے کہ ہم معذرت خواہ ہیں آپ کی درخواست کی کارروائی ہم آگے نہیں بڑھا سکتے بغیر دلیل بغیر کوئی کیے تحقیق.
    سمندر پار پاکستانیوں کو اسٹیبلشمنٹ پے توقع ہوتی ہے انصاف کی لیکن بدقسمتی سے کچھ نہیں ملتا ان کو.
    ۔ یعنی پردیسی کو اتنی حقیر نظر سے دیکھا جاتا ہے جیسے وہ پاکستان کا شہری نہیں ہوتا.75 سال سے ان سے یہ مسئلہ حل نہیں ہوا کہ جب شہری ویزا لینے کے عوض میں کسی کو رقم ادا کرتا ہے تو گرنٹی کے لیے اس کو رسک لینا پڑتا ہے اگر ویزا نہیں ملا تو رقم واپس مل جائے گی یا نہیں میں پاکستان کے ارباب اختیاروں کو کہنا چاہتا ہوں کہ اور سیز پاکستان کو بہت چلینجز درپیش مسائل ہے ان کو احسن طریقہ سے نمٹا جائے
    میرے اہم نکات ہے جو حکومت پاکستان کے گوشوار کرتا ہوں کہ
    حکومت پاکستان کو چائیے اوورسیز پاکستانیوں پر اپنے استعمال یا عزیز و اقارب کیلیے ایسی گفٹ اسکیم کی مد میں ایک گاڑی اپنے لیے یا اپنے اہلِ خانہ کے لیے پاکستان لاسکے وہ بیرونِ ملک مقیم پاکستانیوں کو ہائبرڈ یا الیکٹرک گاڑیاں پاکستان بھجوانے کی اجازت دے. بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کے لیے قومی اسمبلی اور سینیٹ میں نشستیں مختص کرنے کا فیصلہ بھی قابلِ تعریف ہے لیکن یہ نشستیں صوبائی اسمبلی میں بھی مختص کی جانی چاہئیں، کیونکہ اب وقت آگیا ہے کہ اوورسیز پاکستانی اپنے مسائل کے حل کے لیے خود پارلیمنٹ میں موجود ہوں، پاکستانیوں کو ائیرپورٹ پر خصوصی سہولیات فراہم کرنے،ان کی جائیدادوں پر قبضہ ختم کرانے،ان پر پاکستان میں چلنے والے کیسز کی آن لائن سماعت کرنے،انہیں پاکستان میں سرمایہ کاری پر سہولت فراہم کرنے، قومی ائیرلائن کی سروس دنیا بھرکے ممالک میں شروع کرنے اور اوورسیز پاکستانیوں کی میتوں کو دنیا بھر سے سرکاری خرچے پر پاکستان لانے جیسے مسائل حل کیے جائے,دیار غیر میں بسنے والے پاکستانی ای ووٹنگ کے ذریعے اپناحق انتخاب استعمال کر سکیں.
    کیونکہ حالیہ دورمیں اور سیز پاکستانی معیشت کی ریڑھ کی ہڈی ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Must Read

’کیا ہم واقعی آزاد ہیں؟

تحریر : ایم فاروق انجم بھٹہ سوچیۓ کہ اگر ہم واقعی آزاد ہیں تو اب بھی ہم...

جناح انمول ہے

منشاقاضیحسب منشا شاعر مشرق علامہ اقبال نے چراغ رخ زیبا لے کر اس ہستی کو تلاش کر...

پی سی بی نے تینوں فارمیٹ کیلئے 33 کھلاڑیوں کے سینٹرل کنٹریکٹ جاری کر دیے

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے تینوں فارمیٹ کے لیے 33 کھلاڑیوں کے سینٹرل کنٹریکٹ جاری کردیے ، ٹیم کے...

کراچی میں شدید بارشیں، انٹرمیڈیٹ کے 13 اگست کے پرچے اور پریکٹیکلز ملتوی

اعلیٰ ثانوی تعلیمی بورڈ کراچی نے شہر میں شدید بارشوں کے پیش نظر ہفتہ 13 اگست کو ہونے والے انٹرمیڈیٹ کے...

ٹکٹ کی مد میں 20 روپے زیادہ کیوں لیے؟ شہری 22 سال بعد مقدمہ جیت گیا

بھارتی شہری ریلوے ٹکٹ کی مد میں 20 روپے زیادہ لینے کے خلاف کیا گیا مقدمہ بلآخر 22 سال بعد جیت...