Home بلاگ وفاقی محتسب اہل وطن کے لیے باعث رحمت

وفاقی محتسب اہل وطن کے لیے باعث رحمت

تحریر: سلمان علی چودھری

حلف اٹھا نے کے بعد پہلے اجلا س میں ہی وفاقی محتسب اعجاز احمد قر یشی نے اپنے تمام افسران و عملے پر واضح کر دیا تھا کہ وفاقی محتسب سیکرٹر یٹ خد مت خلق کا ادارہ ہے۔ یہاں افسر ی کی کو ئی گنجا ئش نہیں کہ یہ غر یب عوام کی داد رسی اور ان کی جائز شکایات کے ازالے کے لئے بنا یا گیا ہے چنا نچہ شکایت کنند گان کے ساتھ ہمد ردانہ بر تا ؤ کر تے ہو ئے ان کے وکیل کے طور پر ان کے مسا ئل کو قا نون اور قاعدے کے مطابق جلدازجلد حل کر نے کی کو شش کی جائے۔اس سلسلے میں انہوں نے ادارے کو مز ید متحر ک کر نے کے لئے تیز ی سے نئی پالیسیا ں بنا ئیں اور ایسے متعدد نئے اقدا مات اٹھا ئے جن کی وجہ سے سال رواں کی پہلی ششما ہی میں ہی68652 شکا یات کا اندراج ہوا جن میں سے65670کے فیصلے بھی ہو گئے جب کہ پچھلے سال کی پہلی ششما ہی میں 51453 شکا یات مو صول ہو ئی تھیں اور 49056 شکا یات کے فیصلے ہو ئے تھے گو یااس بر س شکا یات کی تعداد میں 17199 اور فیصلوں کی تعداد میں 16614 کا اضا فہ ہوا جو کہ وفاقی محتسب کے ادارے پر عوام النا س کے اعتما د کا مظہر ہے ۔ یہ فیصلے اس قدر جا مع اور شفاف تھے کہ ا ن کے خلا ف نظر ثا نی کی درخواست داخل کرنے والوں کی تعداد ایک فیصد سے بھی کم رہی۔ وفاقی محتسب اعجاز احمد قریشی کا مو قف ہے کہ فو ری فیصلوں کی اہمیت اپنی جگہ مگر اصل چیزان پر عملد رآ مد ہے چنا نچہ اس مقصد کے لئے وہ عملد رآمد کے شعبے کی خود نگرا نی کر تے ہیں جس کے نتیجے میں فیصلوں کے ساتھ ساتھ ان پر عملد رآ مد کا گراف بھی پہلے سے بڑ ھ گیا ہے۔ صدر پا کستان جنا ب عا رف علو ی نے 15 فروری2022ء کو وفاقی محتسب کے صدر دفتر اسلا م آ باد کا دورہ کیا اور ادارے کی کا رکر دگی کا مفصل جا ئزہ لیا۔ اس مو قع پر وفاقی محتسب کی جا نب سے انہیں ایک جا مع بر یفنگ بھی دی گئی۔ صدر پا کستان نے وفاقی محتسب کے ادارے کی کا رکر دگی کو حد درجہ سرا ہتے ہو ئے تاکید کی کہ ادا رے کے لئے آ گا ہی مہم کو مز ید بڑ ھایا جا ئے، اسکے دائر ہ کار کو وسعت دی جا ئے، جن اداروں کے خلا ف شکا یات زیا دہ ہیں ان کے سر برا ہان سے میٹنگ کر کے ان شکا یات کا سد باب کیا جا ئے اور سمند ر پار پا کستا نیوں اور بچوں کے حوا لے سے شکا یات کے حل کا خا ص طور پر اہتمام کیا جا ئے۔ صدر پا کستان کے ان احکا مات کی تعمیل کے لئے ہمہ جہتی حکمت عملی اختیار کر تے ہو ئے فو ری اقدامات کا آ غاز کیا گیا۔
وفاقی محتسب کی طر ف سے ملک میں پھیلے ہو ئے14 علا قا ئی دفا تر لا ہور، کراچی، پشا ور، کو ئٹہ، ملتان، بہا ولپور، فیصل آ باد، ڈی آئی خان، گوجرانوالہ، ایبٹ آ باد، سر گو دھا، حید رآ باد، سکھر اور خا ران کو احکا مات جا ری کئے گئے کہ تحصیلوں اور ضلعوں کے ساتھ ساتھ چھو ٹے قصبوں میں کھلی کچہر یاں لگا نے کا اہتمام کیا جا ئے، جہاں وفاقی محتسب کے مشیر اور تحقیقا تی افسران خود جا کر لوگوں کی شکایات سنیں اور ضلعی انتظامیہ اور متعلقہ ایجنسیوں کے توسط سے مو قع پر ہی احکا مات صادر کر کے مسا ئل کو فوری حل کرنے کا انتظا م کر یں۔اس سلسلے میں وفاقی محتسب نے خود ما نسہر ہ میں اپنی پہلی کھلی کچہر ی لگا ئی، عوامی شکا یات سنیں اور مو قع پر احکا مات صادر کئے۔ واضح رہے کہ اب تک 111کھلی کچہر یاں لگائی جا چکی ہیں۔ ”انصاف آپ کے گھر کی دہلیز پر“ کے عنوان کے تحت پہلے سے جا ریOut-reach Complaint Resolution (OCR) پروگرام کو مز ید متحر ک کیا گیا تا کہ پسما ندہ علا قوں کے شکا یت کنند گان کے قر یبی ضلعوں اور تحصیلوں میں جا کر متعلقہ وفاقی اداروں کے نما ئند وں کے روبرو ان کی شکا یات سنی جا ئیں، ان پر فوری فیصلہ ہو اور عملدرآمد بھی ہو سکے۔ اس ششما ہی میں OCR کے تحت اس ادارے کے تحقیقا تی افسروں نے متعلقہ ضلعوں اور تحصیلوں کے204 دورے کئے (۲)اور عوام النا س کی شکا یات کا ازالہ کیا۔ وفاقی محتسب سیکر ٹر یٹ میں جن اہم مسا ئل پر مختلف اداروں کے ذمہ داران سے اعلیٰ سطحی اور نتیجہ خیز میٹنگز کی گئیں ان میں سر کا ری ملازمین کو پنشن کی جلد ادائیگی، بجلی اور گیس کے بلوں کی تصحیح اور دیگر شکا یات، آ وارہ کتوں کے حوالے سے شکا یات کا ازالہ، بچوں کے حقوق کی حفا ظت،اسٹر یٹ چلڈرن کے حوالے سے پائلٹ پراجیکٹ اور جیل ریفا رمز سرفہرست ہیں۔ لا ہور میں ماہ رمضا ن کے دوران غر یب قید یوں کے لئے جر ما نے کی رقم ادا کر نے کا بند وبست کیا گیا تا کہ وہ جیلوں سے چھٹکا را حا صل کر سکیں۔”پنشن کمیٹی“ کی میٹنگ میں طے کیا گیا کہ اے جی پی آر 30 دن کے اندر پنشن جاری کر نے کا پابند ہو گا اور اگر کسی کیس میں کو ئی کمی بیشی ہو تو بھی قوا عد کے مطا بق 65% پنشن کی ادائیگی فو ری شروع کر دی جا ئے گی تا کہ ریٹا ئر ہو نے والے ملازم کا خا ندان معا شی مشکلا ت کا شکا ر نہ ہو۔ پاکستان ریلو ے ملا زمین کی پنشن میں تا خیر کا نو ٹس لیا گیا اور وزارت ریلو ے کو ہد ایت کی گئی کہ وہ وزارت خزا نہ سے مز ید فنڈ ز حا صل کرکے پنشن کے زیر التوا ء کیسز کو حل کر ے، تمام معا ملا ت میں شفا فیت کو یقینی بنا ئے اور SAP کے جد ید نظام کو مکمل طور پر اپنا تے ہوئے پنشن کے نئے کیسز کو تیز ی سے نمٹا ئے۔ وفاقی محتسب کی مد اخلت سے پی بی سی کے ریٹا ئر ڈ ملا زمین کی پنشن میں حکو مت پا کستان کی طر ف سے اعلا ن کر دہ دس فیصد اضا فہ لگا یا گیا اور بقا یا جات ادا کئے گئے۔ تمام سر کا ری اداروں میں از سر نو پنشن ڈیسک قائم کر نے اور اپنے ملا زمین کی ملا زمت کے ریکارڈ کو کمپیو ٹر ائزڈ کر نے کی ہدایت کی گئی تاکہ کسی ریٹا ئر آ دمی کو شکا یت کا مو قع ہی نہ ملے۔ واضح رہے کہ وفاقی محتسب نے اپنے ایک سینئر ایڈ وائزر کی زیر نگرا نی پنشن سے متعلق ایک ما نیٹر نگ کمیٹی بھی بنا رکھی ہے تا کہ پنشن کے نظام کو درست اور فعال رکھا جا سکے اور پنشن کی ادا ئیگی کے حوا لے سے ان اداروں کی کا رکر دگی کا تسلسل سے جا ئزہ لیاجا ئے جن کے خلا ف شکایات زیا دہ ہیں۔ویسے تو وفاقی محتسب کی مدا خلت سے ہزاروں افراد مختلف النو ع مسا ئل کے سلسلے میں ریلیف حا صل کر رہے ہیں تا ہم نمو نے کے طور پر دو چار شکا یات پر ہو نے والے فیصلوں کا حوا لہ دینا بے جا نہ ہو گا مثلاًملتان میں سا ئلین کی شکا یت پر پوسٹل لائف انشورنس سے فوری طور پر تقر یباًایک کروڑ روپے سے زیا دہ ما لیت کے چیک جا ری کر ائے گئے۔جیکب آ باد انسٹی ٹیوٹ آف میڈ یکل سائنس کو SEPCO کی طرف سے 11 ملین سے زائد بجلی کا بل بھیج کر غیر منصفا نہ بلنگ کا نشانہ بنا یا گیا تھا۔ شکا یت مو صول ہو نے پر وفاقی محتسب کے علاقائی دفتر سکھر نے متعلقہ حکام کو دفتر طلب کر کے کیس کی سما عت کی جس کے نتیجے میں SEPCO حکام نے اپنی غلطی کا اعتراف کیا اور بل درست کر دیا۔ مز ید برآں وزارت موا صلا ت کے سیکر ٹر ی، پا کستان پوسٹ آ فس ڈیپا رٹمنٹ کے ڈا ئر یکٹر جنر ل اورPLICL کے چیف ایگز یکٹو آ فیسر سے ملا قا ت کر کے انہیں ہدا یا ت دی گئیں کہ وہ اپنے سسٹم کو مز ید بہتر بنا ئیں، IT کے جد ید نظا م کو اختیار کر تے ہو ئے عوا می شکا یات کا جلد ازالہ کر یں اور اپنے افسران اور عملے کے ارا کین کو ہدا یات جا ری کر یں کہ وہ لو گوں اور خصو صی طو ر پر شکا یات کنند گان سے نر می اور شا ئستگی کا مظا ہر ہ کر یں۔ Informal Resolution of Disputes (IRD) یعنی ”تنا زعات کے غیر رسمی حل“ کے نام سے ایک نئے پا ئلٹ پراجیکٹ کا آ غا ز کیا گیا جس کے تحت فر یقین کی رضا مندی سے ان کے مختلف النو ع تنا زعات مصا لحتی انداز میں مفت حل کر نے کی کوشش کی جا تی ہے۔ اس پرو گرام کو با قا عدہ عوامی آ گا ہی مہم کے ساتھ منسلک کر نے کے با عث اس کے خا طر خواہ نتا ئج برآمد ہورہے ہیں۔ سر گو دھا، بھلوال، منڈ ی بہا ؤ الد ین، کا لا باغ، میا نوا لی اور دیگر دور دراز علا قوں کے لوگوں کے ایک لا کھ سے زائد یو نٹوں کے بجلی کے اضا فی بل واپس کر وائے گئے۔ کو ئٹہ میں سو ئی گیس کے بل ادا نہ کر نے پر مصر صا رفین سے گیس کمپنی کو ایک کروڑ روپے کے واجبا ت دلا ئے گئے نیز خا ران میں بجلی کے کئی نئے ٹرا نسفا رمر لگوا ئے گئے۔(۳) وفاقی محتسب نے ایک اہم قد م یہ اٹھا یا ہے کہ جن اداروں کے خلا ف شکایا ت بہت زیا دہ تھیں ان کے لئے آر ٹیکل 17 کے تحت معا ئنہ ٹیمیں مقرر کی گئیں جنہوں نے متعلقہ اداروں کے دورے کر کے وہاں عوام النا س کی شکا یات سنیں، مو قع پر ہی احکا مات جا ری کئے اور انتظا میہ سے میٹنگ کر کے انہیں نظام کی بہتر ی کے لئے ہدا یات جا ری کیں۔ ہیڈآفس کی ٹیموں نے نا درا، پو لی کلینک،پو لیس فاؤنڈیشن، اسلا م آ باد ائر پورٹ، سی ڈی اے، پا سپورٹ آ فس اور علا قا ئی دفاتر کی معا ئنہ ٹیموں نے بجلی و گیس کمپنیوں اور یو ٹیلٹی اسٹورز کے علا وہ دیگر کئی اداروں کے84 دورے کر کے مسا ئل حل کرا ئے اور اہم اور مفید رپورٹیں تیا ر کیں جن کی روشنی میں قلیل مد تی اور طویل مد تی سفا رشات مر تب کر کے متعلقہ اداروں کو بھیج کر ان پر عمل در آمد کرا یا جا رہا ہے۔دیگر بہت سی اعلیٰ سطحی میٹنگز کے علا وہ نو ے لا کھ سے زائد اوورسیز پا کستا نیوں کے مسا ئل اور مشکلا ت کے حل کے لئے وزارت خا رجہ اور دیگر متعلقہ ایجنسیوں کے سر برا ہوں اور ذمے داروں کے ساتھ وفاقی محتسب سیکر ٹر یٹ میں خصو صی میٹنگ کی گئی جس کے ذریعے کوئٹہ ائر پورٹ پر ”ون ونڈو سہو لیا تی ڈیسک“ کو فوراً فعال کرا یا گیا۔بیرون ملک پا کستان کے 128 مشنز کے سر برا ہوں کو کھلی کچہر یوں کو زیا دہ مو ئثر بنا نے کے ساتھ ساتھ ہدا یت کی گئی کہ وہ ہفتے میں ایک دن مقرر کر یں تا کہ اوو رسیز پا کستا نیز اپنے مسا ئل کے حل کے لئے ان سے بغیر وقت طے کئے ملا قا ت کر سکیں۔ایسے ہی کئی مز ید اقدا مات کے با عث اس سال کی پہلی ششما ہی میں وفاقی محتسب سیکرٹر یٹ کے سہو لیا تی کمشنر برا ئے اوو رسیز پا کستا نیز کے دفتر سے بیرون ملک پا کستانیوں کی66747 شکا یات نمٹا ئی گئیں جوکہ پچھلے سال کی پہلی ششما ہی میں مو صول ہو نے والی22107 شکا یات کے مقا بلے میں دو سو فیصد زیا دہ ہیں۔وفاقی محتسب اعجا ز احمد قر یشی کئی بار اپنے اس مو قف کو دہرا چکے ہیں کہ وہ غر یب شہر یوں کے مسا ئل حل کر نے کے لئے ہر راستہ استعمال کریں گے۔ شکا یت کنند گان کو زیا دہ سے زیا دہ ریلیف دیں گے اور اپنے دائرہ کار کو دور دراز اور پسما ندہ علا قوں تک بڑ ھا ئیں گے نیزغریب عوام کے لئے فیصلوں پر عملد رآمد کو یقینی بنا یا جا ئے گا اور عمل درآمد نہ کرنے اور تا خیر ی حر بے اختیار کر نے والے افسروں کے خلاف قا نون کے مطا بق تا دیبی کا رروائی کی جا ئے گی۔ عوامی آ گا ہی کے پیش نظر یہاں یہ بتا نا بھی ضروری ہے کہ وفاقی محتسب میں شکا یت درج کرا نے کی نہ کو ئی فیس ہے اور نہ ہی وکیل کی ضرورت اور ہر شکا یت کا زیا دہ سے زیا دہ ساٹھ دنوں میں فیصلہ کر دیا جا تا ہے، کو ئی بھی شخص کسی بھی وفاقی ادارے کے خلاف اپنی شکا یت سادہ کا غذ پر اردو یا انگر یزی میں لکھ کر متعلقہ دستا ویزات کے ہمراہ آن لا ئن ویب سا ئٹ www.mohtasib.gov.pk یا موبائل ایپ یا ای میلmohtasib.registrar@gmail.com پر یاڈاک کے ذریعے وفاقی محتسب سیکرٹریٹ،36-Constitution Avenue، سیکٹر G-5/2، اسلا م آ بادکے پتے پر ارسال کر سکتا ہے نیز ہیلپ لا ئن نمبر1055 پرصبح 8 بجے سے رات10بجے تک فون کر کے رہنما ئی حا صل کر سکتا ہے۔ وفاقی محتسب سیکر ٹر یٹ میں شکا یت موصول ہونے کے بعد چو بیس گھنٹوں کے اندر اندر اس پر کارروائی شر وع ہو جا تی ہے اور شکا یت کنند ہ کو ایس ایم ایس کے ذریعے اطلاع کر دی جا تی ہے جس کے بعد تحقیقا تی افسر کی طرف سے کیس کی سما عت کے لئے متعلقہ ایجنسی کے ساتھ ساتھ شکایت کنندہ کو بھی طلب کیا جاتا ہے تاہم شکایت کنند ہ اپنی سہولت کے مطا بق فون یا وٹس ایپ کے ذریعے گھر بیٹھے بھی اس کا رروائی میں حصہ لے سکتا ہے۔ کا رروائی کی تکمیل کے بعد فیصلے کے اجرا ء کے مو قع پر بھی شکا یت کنند ہ کو ایس ایم ایس کے ذریعے اطلا ع دی جا تی ہے۔
(رپورٹ تیار کر دہ:ڈاکٹر انعام الحق جا وید)

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Must Read

اسپین کا گھروں میں رہ کر کام کرنے والے افراد کیلئے نیا ویزا پروگرام

اسپین نے یورپی یونین سے باہر کے ممالک سے تعلق رکھنے والے شہریوں کے لیے 'ڈیجیٹل نوماڈ' ویزا پروگرام شروع کرنے...

منی لانڈرنگ کیس : جیکولین فرنینڈس گرفتار ہونے سے بچ گئیں

بالی وڈ اداکارہ جیکولین فرنینڈس کو منی لانڈرنگ کیس میں عبوری ضمانت مل گئی۔ بھارتی میڈیا کے...

قذافی اسٹیڈیم میں پاک انگلینڈ سیریز کی تیاریاں، رنگ و روغن کردیا گیا

پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان ٹی 20 سیریز کے بقیہ تین میچز کا آغاز 28 ستمبر سے لاہور میں ہوگا۔

عامر لیاقت سے شادی سےکافی عرصہ پہلے سے شوبز میں کام کر رہی تھی: سیدہ طوبیٰ

پاکستان کی ابھرتی ہوئی اداکارہ اور مرحوم عامر لیاقت حسین کی سابقہ اہلیہ سیدہ طوبیٰ انور نے شوبز انڈسٹری میں آنے...

چائے پینے والے افراد روزانہ کتنی پلاسٹک کھا رہے ہیں؟

کراچی کی دودھ پتی چائے میں بھی مائیکر و پلاسٹک کی آلودگی کا انکشاف ہوا ہے۔ جناح...