Home بلاگ رحمٰن کے بندوں کے درد کا درماں لوگ

رحمٰن کے بندوں کے درد کا درماں لوگ

منشاقاضی
حسب منشا

کسی انسان کی خواہش اس کی کاوش کے بغیر پوری نہیں ہوئی اور نہ ہی پھل آپ کی جھولی میں خواہش سے گرتے ہیں اس کے لیئے وقت کی شاخ کو ہلانا پڑتا ہے , اندھیروں کو آپ جتنا مرضی چاہیں برا کہتے رہیں لیکن اس کے لیئے اپنے حصے کا دیا جلانا پڑتا ہے. اور اس ہنر سے آشنا ہمارے ملک کے نامور عجوبہ ء روز گار ڈاکٹر , جناب وقار احمد نیاز اور ان کے رفقائے کرام کا وجود ہے جنہوں نے گردے کے مرض کا شافی علاج بڑی تحقیق و جستجو کے بعد ڈھونڈ لیا ہے , میں نے اپنے مربی و محسن جناب میاں مشتاق احمد جاوید سے ڈاکٹر وقار احمد نیاز کے بارے میں بتایا کہ ہمارے ملک میں ایک ایسا بھی معالج خاص موجود ہے جو بلا کا نباض اور سریع الاثر اداؤں سے سر فراز ہیں , جناب میاں مشتاق احمد اور جناب میاں خالد احمد نے میری استدعا پر اپنی گراں بہا مصروفیات میں سے چند قیمتی لمحات نکال کر وقت مقررہ پر رحمٰن فاؤنڈیشن کے مرکزی مرکز 133 جی ماڈل ٹاؤن پہنچ گئے , ڈاکٹر وقار احمد نیاز کراچی سے سیدھے لاہور ائر پورٹ سے رحمٰن فازونڈیشن پہنچ گئے , ڈاکٹر وقار نیاز کے قول و عمل میں یکسانیت پائی جاتی ہے , آپ کی دورس نگاہ کا اعجاز ہے کہ آپ مریض کی چال اور اس کی گفتگو سےنصف بیماری کی علامات بتلا دیتے ہیں , بے سروسامانی میں فاؤنڈیشن کی بنیاد رکھنے والے مسیحا ڈاکٹر وقار احمد نیاز کے بارے میں کون جانتا تھا کہ ایک نہ ایک دن وہ آسمان حکمت پر آفتاب و مہتاب بن کر چمکیں گے , اس میں آپ کا کوئی کمال نہیں ہے , یہ سارا کمال اس نام کا جس نے پوری کائنات تخلیق کی اور وہ ہے نام جو اربوں نہیں کھربوں انسانوں کی زبان پر رہتا ہے اور وہ ہے رحمٰن , اس نام کی برکت سے آج امریکہ سے ممتاز سماجی سائنسدان جناب میاں مشتاق احمد جاوید اور سعودی عرب میں مقیم آپ کے برادر اکبر میاں خالد صاحب جو لاہور میں پچھلے ایک سال سے موجود ہیں , آج آپ نے رحمٰن فاؤنڈیشن کا وزٹ کیا اور ڈاکٹر وقار نیاز سے مل کر قلبی اور روحانی مسرت محسوس کی , آپ کی یہ ملاقات ڈائیلنسز کے مریضوں کے لیئیے باد صبح گاہی کا جھونکا ثابت ہو گی , اگلے ہفتے آپ کی مکرر آمد اور مفصل تبادلہ ء خیال کا ماحول پیدا کرئے گی , انسانیت کی منزل محبت ہے , کہتے ہیں محبت اندھی ہوتی ہے لیکن اس کی آنکھیں بڑی حسین ہوتی ہیں , میرے خیال میں تو آنکھیں نہیں دیکھتی دماغ دیکھتا ہے , آنکھیں تو گھورتی ہیں , ملٹن , ہومر , ڈاکٹر طہ , ہیلن کیلر اور ڈاکٹر شیخ اقبال ماہر اقبالیات نابینا ہیں ان کی آنکھیں تو نہیں دیکھتی مگر انہوں نے آنکھوں والوں سے زیادہ بلکہ ہمالہ صفت کام کیا ہے , ڈاکٹر وقار نیاز کو مولائے کریم نے بصیرت اور بصارت کی دولت سے سر فراز کیا ہے , ڈاکٹر صاحب آنکھوں سے بھی اور دماغ سے بھی دیکھتے ہیں , میرے خیال میں آنکھوں سے انسان اندھا نہیں ہوتا عقل سے اندھا ہوتا ہے اور وہ لوگ بڑے خوش نصیب ہیں جن کی بصیرت کی آنکھ دیکھ رہی ہے , جس طرح بڑا جہاز گہرے پانیوں میں چلتا ہے اسی طرح بڑا دماغ مشکل حالات میں چلتا ہے اور آج وہ عقدہ کشا ہو گیا ہے کہ ڈاکٹر وقار نیاز تنہا ایک شخص پورے ادارے کا کام کیونکر کرتا ہے , غنیمت ہے کہ شہر میں ایک روشن دماغ موجود ہے , مجھے امید ہی نہیں کامل یقین ہے کہ جناب میاں مشتاق جاوید , جناب خالد میاں اور دوسرے برادران اس عظیم انسان دوست مسیحا کو تنہا نہیں چھوڑیں گے , وڈیو کال پر ایبٹ آباد سے ڈاکٹر کیوان قدر خان نے بھی رحمٰن فاؤنڈیشن کے فلاحی منصوبوں اور انسان دوستی کی تعریف کی , ڈاکٹر کیوان قدر خان ملی زئی سے میرا تعلق نصف صدی کو چھو رہا ہے , ڈان ٹریولز ڈیوس روڈ پر کتنے ہی سفید پوش شخصیات اور خصوصأ طلبا کو مفت جہاز کی ٹکٹیں لے کر دیتے رہے ہیں , ان میں دو سفارت کے عہدوں پر بھی فائز ہو گئے تھے , میرے ایک اور دوست بھی یاد آ رہے ہیں , حافظ ذوالفقار جو امریکہ میں حبشیوں کے ہاتھوں سٹور میں شہید ہو گئے تھے وہ بھی ڈان ٹریولز میں ملتے رہے تھے , پنجاب سمال انڈسٹریز کارپوریشن کے ڈائریکٹر عبدالرزاق مرحوم مرنجاں مرنج شخصیت تھے , وہ بھی ڈان پر ہی پائے جاتے تھے,

ان آبلوں سے پاؤں کے گھبرا گیا تھا میں
جی خوش ہوا ہے راہ کو پر خار دیکھ کر

اچھے اور پاکیزہ خیالات کی عبقری شخصیات کی ذہنی ہم آہنگی منزل کے راستے آسان کر دیتی ہے , ہمارے ملک کے نامور شاعر نذیر قیصر کا یہ شعر کتنا موقع پر یاد آیا ,

خالی دعا کا کیا ہوتا ہے
اچھا خیال دعا ہوتا ہے

جناب نذیر قیصر اور بیگم عابدہ قیصر نے بھی رحمٰن فاؤنڈیشن کا دورہ کیا اور بہت متاثر ہوئے , سماعت کی کمزوری کو بھی آپ نے مسکرا کر دل میں سجا لیا ہے , بقول غالب

بہرا ہوں میں , تو چاہیئے دونا ہو التفات
سنتا نہیں ہوں بات مکرر کہے بغیر

محترمہ فردوس نثار کی علالت آڑے نہ آتی تو وہ آج میاں مشتاق جاوید , جناب میاں خالد اور جناب نذیر قیصر و بیگم عابدہ قیصر کو بنفس نفیس خوش آمدید کہتیں , محترمہ فردوس نثار کی خدمات ناقابل فراموش ہیں , اور دیگر ڈائریکٹران جناب نوازش علی خان لودھی کی کاوش , راؤ اسلم صاحب کی صائب رائے , فرح دیبا کا زیبا کردار , ایم ڈی میاں الفت رسول کا اصول , سکوارڈن لیڈر جناب شاھد رشید کی تحقیق و جستجو , انعام الحق سلیم کی عقل سلیم اور ڈاکٹر کیوان قدر خان ملی زئی کی مشاورت ڈاکٹر وقار نیاز کے عزم بالجزم میں مضبوطی اور حوصلہ دیتے ہیں , کیونکہ

حوصلے آگ کو گلزار بنا دیتے ہیں

انسانیت کی منزل محبت اور محبت کی منزل رحمٰن سے عشق کا تقاضا کرتا ہے , رحمٰن فاؤنڈیشن کی کامیابی کا راز رحمن کے نام میں ہے اور رحمٰن دنیا میں ڈاکٹر وقار نیاز سے کوئی بہت بڑا کام لینے کی ہمت دے رہے ہیں ,

نگہ بلند , سخن دلنواز جاں پرسوز
یہی ہے رخت سفر میر کارواں کے لیئے

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Must Read

test

test

صحابہ کرام اہلبیت امہات المومنین کی توہین پر قانون سازی

تحریر: محمد ریاض ایڈووکیٹآئین پاکستان کے تحت مملکت کا نا م اسلامی جمہوریہ پاکستان اور سرکاری مذہب اسلام ہے۔اسکے باوجود پاکستان...

مجھے اس دیس جانا ہے

منشاقاضیحسب منشا مجھ پر پہلی بار اس بات کا انکشاف ہوا جب میں نے نثری ادب میں...

دنیا کا سب سے بڑا مقروض ملک ہونے کے باوجود جاپان ڈیفالٹ کیوں نہیں کرتا؟

گزشتہ سال ستمبر کے آخر تک جاپان اس حد تک مقروض ہو چکا تھا کہ قرضوں کے اس حجم کو سُن...

پی ٹی آئی کا سندھ اسمبلی سے مستعفی نہ ہونے کا فیصلہ

کراچی (سٹاف رپورٹر)پاکستان تحریک (پی ٹی آئی) نے سندھ اسمبلی سے مستعفی نہ ہونے کا فیصلہ کرلیا۔